Nawaz Sharif agrees to return Pakistan

218

نواز شریف وطن واپسی کیلئے رضا مند

 

لاہور: میاں محمد نواز شریف نامکمل سلوک چھوڑ کر پاکستان واپس جانے پر راضی ہوگئے ، جس پر پارٹی رہنماؤں نے ان کی مکمل صحت یابی تک پابندی عائد کردی۔ مسلم لیگ ن نے پارٹی رہن

نواز شریف وطن واپسی کیلئے رضا مند

ما محمد نواز شریف سے درخواست کی ہے کہ وہ اپنا علاج مکمل کریں اور ڈاکٹروں کی اجازت سے پاکستان واپس آجائیں ، یہ کہتے ہوئے کہ نواز شریف ملک اور قوم کا اثاثہ ہیں۔

ان کی صحت اور زندگی پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جاسکتا ، عدلیہ نے ان کی جان کو شدید خطرات کی وجہ سے نواز شریف کو بیرون ملک علاج کی اجازت دی تھی اور ہم امید کرتے ہیں کہ عدلیہ اپنے ڈاکٹروں کے جائزے کی اطلاعات کو دھیان میں رکھے گی۔ ہاں ، ہم حکومت کو عوام کو پی ٹی آئی کی حقیقت اور حقیقت جاننے کے لئے اتنا موقع دینا چاہتے تھے جسے عوام جان چکے ہیں۔ ان کی ابتدا چکن انڈے کی معیشت سے ہوئی تھی جو بکری کی معیشت سے بھنگ کی معیشت تک پہنچی تھی۔ جدید ترین شاہکار پہنچ گیا ہے اور ایسا لگتا ہے کہ اب وہ ملک میں پوست کی کاشت بھی کریں گے۔

قیادت کمیٹی کے فیصلے کے مطابق اپوزیشن کی کل جماعتی کانفرنس 20 ستمبر کو ہوگی ۔ان خیالات کا اظہار مسلم لیگ ن کے سکریٹری جنرل احسن اقبال نے کیا۔ ماڈل ٹاؤن میں پارٹی کے مرکزی سیکرٹریٹ میں شاہد خاقان عباسی ، خواجہ محمد آصف ، رانا تنویر حسین ، رانا ثناء اللہ ، خواجہ سعد رفیق ، سردار ایاز صادق ، انجینئر خرم دستگیر ، مریم اورنگزیب ، عظمی بخاری و دیگر نے پریس کانفرنس کی۔ اس سے قبل ، پارٹی کے مرکزی رہنماؤں کا ہنگامی مشاورتی اجلاس مسلم لیگ (ن) کے صدر محمد شہباز شریف کی زیر صدارت ان کی رہائش گاہ پر ہوا ، جس میں نواز شریف کی وطن واپسی کا عدالتی حکم ، اے پی سی کے انعقاد کے لئے قیادت کمیٹی کا اجلاس اور مہنگائی سمیت ملک

مجموعی صورتحال پر تفصیل سے تبادلہ خیال کیا گیا اور آئندہ کے لائحہ عمل پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ احسن اقبال نے کہا کہ عدلیہ نے مسلم لیگ (ن) کے رہنما محمد نواز شریف کو ان کی صحت کو غیرجانبداری کے شدید خطرات کی وجہ سے علاج کے لئے بیرون ملک جانے کی اجازت دی تھی اور اس سے قبل حکومت اور وزیر اعظم نے ان کی صحت کے بارے میں دریافت کیا تھا۔ مکمل طور پر مطمئن ، ناکام حکومت اپنی کارکردگی کے بارے میں بات کرنے کی بجائے

ٹی وی ٹاک شوز میں ، نواز شریف کی صحت سے متعلق سیاست کی گئی ہے ، جو حکومت کی ذہنی کمترتی کی علامت ہے ، اور اسے اتنی بے شرمی سے بچہ دانی لینے میں شرم نہیں آتی ہے۔ مسلم لیگ (ن) نے فیصلہ کیا ہے کہ پارٹی کے رہنما محمد نواز شریف سے ان سے درخواست کی جائے گی کہ وہ اپنا علاج مکمل کریں اور وہ اس وقت تک گھر واپس نہیں آئیں گے جب تک کہ ڈاکٹروں نے انہیں وطن واپس آنے کے لئے مکمل طور پر صحتمند قرار نہیں دیا۔ نواز شریف ملک و قوم کا اثاثہ ہیں۔

ان کی زندگی اور صحت کی سیاست نہیں کی جاسکتی ، نواز شریف اپنا علاج مکمل کرنے کے فورا بعد واپس آجائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ جب نواز شریف علاج کے لئے بیرون ملک گئے تو ، کورونا کی وجہ سے پوری دنیا میں علاج کی سہولیات معطل کردی گئیں ، جس سے نہ صرف نواز شریف بلکہ پوری دنیا کے مریض بھی متاثر ہوئے۔ ہم توقع کرتے ہیں کہ عدلیہ نواز شریف کی صحت کا جائزہ لے گی۔ ان کے معالج کا جائزہ لینے کی رپورٹس کا بھی ٹریک رکھیں گے۔

See more: EX-EastEnders star Molly Conlin has revealed she was held at knifepoint

انہوں نے کہا کہ نواز شریف اپنی بیمار بیوی کو موت کے بستر پر چھوڑ کر قانون کے نفاذ کے لئے گھر واپس آئے تھے ، لہذا ان کی صحت پر گفتگو کرنا ان کی ایک بہت بڑی مثال اور انسانیت کی بدنامی تھی۔ جب بھی ڈاکٹروں نے انہیں اجازت دی اور اس کی ران کا علاج مکمل ہو گیا تو ، نواز شریف بغیر کسی تاخیر کے عوام کی نگاہ میں رہتے۔ انہوں نے کہا کہ چونکہ نواز شریف علاج کے لئے بیرون ملک تھے اس لئے ان کے معاملات قانونی تھے

اس کی حیثیت سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے اور اس کی عدم موجودگی میں اس کے معاملات پر قانونی طور پر پیروی کی جا سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کے تمام ابواب ان کی رائے میں متفق ہیں کہ ہم نواز شریف سے درخواست کریں گے کہ وہ ان کی مکمل حمایت کریں۔ علاج معالجے کے بعد ، ڈاکٹروں کی رائے کی روشنی میں وطن واپس آجائیں۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف کی صحت اور زندگی کا فیصلہ ٹی وی شوز یا طنزیہ بیانات سے نہیں ہوسکتا۔

قانونی ٹیم نے بتایا کہ نواز شریف کو طبی علاج کے لئے بیرون ملک جانے کی اجازت ہے ، وہ کسی بھی کانفرنس میں شریک نہیں ہوئے یا دورے پر نہیں گئے تو انہیں اپنا علاج مکمل کرنا چاہئے۔ لائحہ عمل مرتب کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ اے پی سی کے حوالے سے قیادت کمیٹی کا اجلاس ہوا ہے اور مسلم لیگ (ن) کی تجاویز پر دوبارہ اجلاس ہوگا۔

اپوزیشن کی اے پی سی 20 ستمبر کو ہوگی۔ انہوں نے اس سوال کا جواب نہیں دیا کہ نواز شریف ان کے وکیل ان کے ساتھ سلوک کی رپورٹس عدالت میں پیش کر رہے ہیں۔ انہوں نے شیخ رشید کی جانب سے مسلم لیگ (ن) کے تقسیم کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ایک نشست پارٹی ہمارے قائد مسلم لیگ (ن) کی طاقت کا اندازہ نہیں لگا سکتی۔ نواز شریف ہیں اور سب اپنی قیادت میں چٹان کی طرح متحد ہیں۔

LAHORE: Mian Muhammad Nawaz Sharif has agreed to leave incomplete treatment and return to Pakistan, on which party leaders have barred him till he fully recovers. PML-N has requested party leader Muhammad Nawaz Sharif to complete his treatment and return to Pakistan with the permission of doctors, saying that Nawaz Sharif is an asset of the country and the nation.

No compromise can be made on his health and life, the judiciary had allowed Nawaz Sharif to seek treatment abroad due to serious threats to his life and we hope that the judiciary will keep in mind the reports of his doctors’ review. Yes, we wanted to give the government so much opportunity for the people to know the reality and the reality of the PTI which the people have come to know. Their origin started from the chicken egg economy which went from the goat economy to the cannabis economy. The latest masterpiece has reached and it seems that now they will also cultivate poppy in the country. According to the decision of the leadership committee, the all-party conference of the opposition will be held on September 20.

These views were expressed by PML-N Secretary General Ahsan Iqbal. Shahid Khaqan Abbasi, Khawaja Muhammad Asif, Rana Tanveer Hussain, Rana Sanaullah, Khawaja Saad Rafique, Sardar Ayaz Sadiq, Engineer Khurram Dastgir, Maryam Aurangzeb, Azmi Bukhari and others held a press conference at the party’s central secretariat in Model Town. Earlier, an emergency consultative meeting of the party’s central leaders was held at his residence under the chairmanship of PML-N President Muhammad Shahbaz Sharif in which a court order for Nawaz Sharif’s repatriation, a meeting of the leadership committee for holding the APC and Of the country including inflation

The overall situation was discussed in detail and the strategy for the future was discussed. Ahsan Iqbal said that the judiciary had allowed PML-N leader Muhammad Nawaz Sharif to go abroad for treatment due to unwarranted serious threats to his health and earlier the government and the Prime Minister had inquired about his health. Completely satisfied, the failed government instead of talking about its performance

In TV talk shows, Nawaz Sharif’s health has been politicized, which is a sign of the government’s mental inferiority, and he is not ashamed to take the uterus so shamelessly. The PML-N has decided that party leader Muhammad Nawaz Sharif He will be requested to complete his treatment and will not return home until the doctors declare him completely healthy to return home. Nawaz Sharif is an asset of the country and the nation.

His life and health cannot be politicized, Nawaz Sharif will return immediately after completing his treatment. He said that when Nawaz Sharif went abroad for treatment, treatment facilities were suspended all over the world due to Corona, which affected not only Nawaz Sharif but also patients all over the world. We expect the judiciary to look into Nawaz Sharif’s health. Will also keep track of their physician review reports.

He said that Nawaz Sharif had left his ailing wife on his death bed and returned home to enforce the law, so discussing his health was a great example of him and a disgrace to humanity. Whenever the doctors gave him permission and his thigh treatment was completed, Nawaz Sharif would be in the public eye without any delay. He said that since Nawaz Sharif was abroad for treatment, his cases were legal

His status does not matter and in his absence his cases can be pursued legally. He said that all the chapters of PML-N are unanimous in their opinion that we will request Nawaz Sharif to give his full support. After receiving treatment, return home in the light of the opinion of the doctors. He said that Nawaz Sharif’s health and life could not be decided by TV shows or sarcastic statements.

He said that Nawaz Sharif was allowed to go abroad for medical treatment, he did not attend any conference or went on a tour so he should complete his treatment, the legal team said. Will formulate a plan of action. He said that a meeting of the leadership committee had been held regarding the APC and a meeting would be held again on the suggestions of PML-N. The APC of the opposition would be held on September 20. He did not reply to a question that Nawaz Sharif His lawyers have been submitting reports of his treatment to the court. Referring to the PML-N split on behalf of Sheikh Rashid, he said that a one-seat party cannot gauge the strength of the PML-N, our leader. Nawaz Sharif is and all are united like a rock under his leadership.